What Am I * * * * * * * میں کیا ہوں

میرا بنیادی مقصد انسانی فرائض کے بارے میں اپنےعلم اور تجربہ کو نئی نسل تک پہنچانا ہے * * * * * * * * * * * * * * رَبِّ اشْرَحْ لِي صَدْرِي وَيَسِّرْ لِي أَمْرِي وَاحْلُلْ عُقْدَةِ مِّن لِّسَانِي يَفْقَھوا قَوْلِي

شہید تم سے یہ کہہ رہے ہیں

Posted by افتخار اجمل بھوپال پر جولائی 24, 2007

اپنے کمپیوٹر کا ساؤنڈ سسٹم آن کر لیجئے [switch on sound system of your computer] اور سنئے ۔
یہ واحد نظم ہے جو عبدالرشید غازی شہید نے خود لکھی اور جامعہ فریدیہ کی ایک محفل میں پڑھی تھی ۔

Advertisements

8 Responses to “شہید تم سے یہ کہہ رہے ہیں”

  1. basim said

    اس نظم کو ایم پی تھری فارمیٹ میں حاصل کرنے کیلیے نیچے دیے گئے ربط کو کلک کیجیے
    http://hera.divshare.com/launch.php?f=1229125&s=1ee

  2. السلام علیکم،۔
    اللہ سبحانہُ وتعالیٰ کی لاٹھی بے آواز ہے۔ جنہوں نے انسانیت کا قتل کیا ہے، ان کو ان کے کیے کی سزا ضرور ملے گی، انشاءاللہ!۔
    آمین۔
    ان شہداء نے تو اپنا نام اللہ کے دین کو قأیم کرنے والوں میں شامل کر لیا ہے، اب اللہ ہمیں بھی یہ توفیق دے کہ ہم میں بھی اُس اللہ کے دین کے لیے کسی بھی باطل سے ٹکرانے کا حوصلہ پیدا ہو جأے۔
    آمین

  3. اجمل said

    باسم صاحب
    شکریہ

  4. اجمل said

    ابو حلیمہ صاحب
    بلا شُبہ اللہ کی لاٹھی بے آواز ہے ۔
    مجھے تو حیرت اس بات پر ہے ایک شخص کسی گاڑی کے نیچے آ کر مر جائے تو خواہ قصور نیچے آنے والے کا ہی ہو ۔ ایک کہرام مچ جاتا ہے ۔ لال مسجد اور جامعہ حفصہ میں ڈیڑھ دو ہزار بے گناہ طلباء و طالبات جلا اور بھُون کر رکھ دئے گئے اور عوام میں سے کوئی سڑکوں پر نہ آیا ۔

  5. anonyums said

    Shaheed koan hai? Woh Col Haroon bhee toa shaheed howa jis kee jaan aap kay is Ghazi nay lee. Woh be Panch waqat ka nimazee tha aur shaheed honay kee tumna rukhta tha.

    Ghazi agencioon ka admi tha ghalat kam ka ghalat unjam

  6. اجمل said

    گمنام صاحب
    بات بہت اونچی کرتے ہیں مگر اپنا نام لکھنے کی ہمت نہیں ۔ خیر کوئی بات نہیں ۔ آپ کی اطلاع کیلئے عرض ہے کہ کرنل کو کسی لال مسجد والے نے نہیں مارا تھا بلکہ کرنل ۔ ایک میجر اور دو کیپٹن ان بارودی سرنگوں میں سے ایک کا شکار ہوئے تھے جو ان کے ساتھی فوجیوں نے لال مسجد اور جامعہ حفصہ کے گرد اسلئے بچھائی تھیں کہ جو لال مسجد یا جامعہ حفصہ سے باہر نکلے پھڑک جائے مگر اللہ کو سب سے پہلے کرنل کا پھڑکنا منظور ہوا ۔
    آپ کا دوسرا استدلال کہ مولوی ایجنسیوں کا آدمی تھا بھی کوئی صداقت نہیں رکھتا کیونکہ ایجنسیاں آجکل پرویز مشرف اور بُش کے ماتحت ہیں ۔

  7. omerifti said

    the person whose commented on number 5 anonomus i wanna say this that,
    mai tumhain paisay daita hoon aur jo kuch chahiye hay mai deta hoon par agar mai tumhain yeh sub doonga tau mughay badlay mai tumhari jaan chahiye hay kia tum doogay?
    agar woh agency ka banda hota na tau woh apni jaan ka nazrana aaisay na paish karta samghay beta kehna bohat aasan hota hay par nibhana bohat bohat mushkil.
    aur agar tum nay un kay shaheed honay k baad ki pic dekhi hay tau tumhain un kay chehray pay aik muskurahat nazar aai hoge yeh shaheed ki nishani hooti hay.

  8. اجمل said

    عمر افتخار صاحب
    آپ نے درست کہا

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Connecting to %s

 
%d bloggers like this: