What Am I * * * * * * * میں کیا ہوں

میرا بنیادی مقصد انسانی فرائض کے بارے میں اپنےعلم اور تجربہ کو نئی نسل تک پہنچانا ہے * * * * * * * * * * * * * * رَبِّ اشْرَحْ لِي صَدْرِي وَيَسِّرْ لِي أَمْرِي وَاحْلُلْ عُقْدَةِ مِّن لِّسَانِي يَفْقَھوا قَوْلِي

غَلَط فہمی کا ازالہ يا تصحيح

Posted by افتخار اجمل بھوپال پر جولائی 28, 2006

ميں چلتے چلتے ايک بلاگ پر پہنچا ۔ اُردو کے کئی شعراء کا کلام لکھا تھا ۔ پڑھنے لگ گيا ۔ کچھ شعر  مُضطر صاحب کے نام سے لکھے تھے ۔ ملاحظہ ہوں 

ميرے خيال ميں مندرجہ بالا اشعار بہادر شاہ ظفر کے اشعار ميں معمولی سا ردّ و بدل کر کے اپنائے گئے ہيں ۔ ملاحظہ ہوں بہادر شاہ ظفر کے متعلقہ اشعار ۔

 نہ کسی کی آنکھ کا نور ہوں نہ کسی کے دل کا قرار ہوں
جو کسی کے کام نہ آ سکے ميں وہ اِک مُشتِ غُبار ہوں
ميں نہيں ہوں نغمہءِ جانفزا کوئی سُن کے مجھ کو کرے گا کيا
ميں بڑے بروگ کی ہوں صدا ميں بڑے دُکھوں کی پُکار ہوں
ميرا رنگ روپ بگڑ گيا ميرا يار مجھ سے بچھڑ گيا
جو چمن خزاں سے اُجڑ گيا ميں اُسی کی فصلِ بہار ہوں
نہ تو ميں کسی کا حبيب ہوں نہ تو ميں کسی کا رقيب ہوں
جو بگڑ گيا وہ نصيب ہوں جو اُجڑ گيا وہ ديار ہوں
پئے فاتحہ کوئی آئے کيوں کوئی چار پھول چڑھائے کيوں
کوئی آ کے شمع جلائے کيوں ميں وہ بيکسی کا مزار ہوں

Advertisements

4 Responses to “غَلَط فہمی کا ازالہ يا تصحيح”

  1. Indscribe said

    The ghazal is not Bahadur Shah Zafar’s. It is one of the biggest fallacies. There are several books on the subject on how some couplets and ghazals were attributed to other poets. Read any Kulliyaat or good selection of Urdu ghazal you will find the truth. The best way is to talk to any litterater, a good adeeb and he will tell you. Different versions of the ghazal were sung to suit music and it has nothing to do with Zafar. Like in India it is generally believed tht ‘Sarfaroshi ki tamanna ab hamare dil meN hai’ was penned by Ramprasad Bismil but it is proven that it was written by another non-Muslim poet Bismil Ilahabaadi.

  2. اجمل said

    Adnan

    I have been reading it as poetry by Bahadur Shah Zafar since 1950 AD when I was in 8th Class. I do not know when it was discovered not to be his.

  3. Mujeeb said

    It is muztars ghazal. Earlier I was also confused.

  4. بہادر شاہ ظفر سے منسوب مشہورِ زمانہ غزل ‘نہ کسی کی آنکھ کا نور ہوں، نہ کسی کے دل کا قرار ہوں’ کو صاحبِ تالیف نے شاعر’جاں نثار حسین اختر’ کے والد ‘مضطر خیر آبادی’ سے منسوب کیا ہے

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Connecting to %s

 
%d bloggers like this: