What Am I * * * * * * * میں کیا ہوں

میرا بنیادی مقصد انسانی فرائض کے بارے میں اپنےعلم اور تجربہ کو نئی نسل تک پہنچانا ہے * * * * * * * * * * * * * * رَبِّ اشْرَحْ لِي صَدْرِي وَيَسِّرْ لِي أَمْرِي وَاحْلُلْ عُقْدَةِ مِّن لِّسَانِي يَفْقَھوا قَوْلِي

میلہ

Posted by افتخار اجمل بھوپال پر اپریل 8, 2006


کوئی آئے کوئی جائے
کوئی روئے کوئی گائے
میلہ رُکنے نہ پائے
میلہ جگ والا ساتھی رے
چلتا رہے 

Advertisements

2 Responses to “میلہ”

  1. Khawar said

    پنجابى ميں كەتے ەيں ـ
    ملكـ مائى دا وسے
    كوئى روئے تے كوئى ەسے
    آپ كى باتوں سے بزرگى كچهـ ذياده ەى جهلكنے لگى هے ـ
    پنجابى كے مشەور شاعر
    مياں محمد بخش صاحب فرماتے هيں ـ
    گئى جوانى آيا بڑهاپا جاگ پئياں سب پيڑاں
    ەن كى كرن محمد بخشا كوڑ جوائين هريڑاں ـ

  2. اجمل said

    خاور صاحب
    آپ کم از کم پنجابی ۔ اُردو ۔ جاپانی ۔ فرانسیسی اور انگریزی زبان کے ماہر ہیں ۔ میں ماہر نہیں محروم ہوں اور ناجانے کب مرحوم ہو جاؤں ۔ عمر کے لحاظ سے تو مجھے بوڑھا ہی شمار ہونا چاہیئے مگر اللہ کے فضل سے بہت سے جوانوں سے زیادہ مُشقّت کر سکتا ہوں ۔ آخر والدیں نے خالص دودھ اور دیسی گھی کھِلا کر پالا تھا میگڈانلڈ اور کے ایف سی نہیں ۔ کیا خیال ہے ؟
    آپ جانتے ہیں میری آپ سے عقیدت کی وجہ کیا ہے ؟ آپ کی اپنے گاؤں کے میلے کپڑوں والوں سے محبت ۔

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Connecting to %s

 
%d bloggers like this: