What Am I * * * * * * * میں کیا ہوں

میرا بنیادی مقصد انسانی فرائض کے بارے میں اپنےعلم اور تجربہ کو نئی نسل تک پہنچانا ہے * * * * * * * * * * * * * * رَبِّ اشْرَحْ لِي صَدْرِي وَيَسِّرْ لِي أَمْرِي وَاحْلُلْ عُقْدَةِ مِّن لِّسَانِي يَفْقَھوا قَوْلِي

ایک در بند ہوتا ہے تو

Posted by افتخار اجمل بھوپال پر جنوری 30, 2006

جب خوشیوں کا ایک دروازہ بند ہوتا ہے تو اللہ سُبحَانُہُ وَ تَعَالی دوسرا دروازہ کھول دیتا ہے
لیکن اکثر ایسا ہوتا ہے کہ ہماری نظریں بند دروازے پہ لگی رہتی ہیں اور ہم دوسرے کھُلنے والے دروازہ کی طرف دیکھتے ہی نہیں

Advertisements

8 Responses to “ایک در بند ہوتا ہے تو”

  1. السلام علیکم
    سبحان اللہ ، کیا خوب معرفت کی بات کہی ہے آپ نے ، اللہ سبحانہ و تعالیٰٰ آپ کو ہمیشہ خوش رکھے آمین۔

  2. اجمل said

    پردیسی صاحب
    جزاک اللہِ خَیرٌ

  3. انکل یہ کتنی سچ بات ہے نا کہ انسان نا امید بہت جلدی ہوجاتا ہے پر اتنی ہی جلدی وہ پھر محنت نہیں کرتا۔۔۔ کیوں ہوتا ہے ایسا؟

  4. Asma said

    صرف خوشیوں ہی کی کیا بات ہے ۔۔۔زندگی میں کسی بھی مقام پر ایک در بند ہوتا ہے تو اللہ سَو اور در کھولنے والی ذات ہے ۔۔۔ گر کہ ہم دھیان دیں ۔۔۔ اور دعا پہ قوی یقیں رکھیں

  5. عائشہ بیٹی
    انسان جب پیدا کرنے والے سے دُور ہو جاتا ہے تو مادی چیزیں جو سامنے نظر آتی ہیں اُن پر بھروسہ کرنے لگتا ہے پھر اُسے اللہ کی مدد نظر نہیں آتی

    اسماء صاحبہ
    خوشی ہنسنے کا نام تو کوتاہ اندیشوں نے رکھ دیا ہے ۔ کبھی آپ نے دیکھا کہ اچانک بہت خوشی ملنے سے آنکھوں سے آنسوؤں کی برسات جاری ہو جاتی ہے ۔ خوشی دراصل کِسی چیز کے حصول یا کامیابی کو کہتے ہیں ۔ اوّل بات اللہ پر یقین ہے ۔ اِس کے بغیر کچھ نہیں ۔

  6. عائشہ بیٹی
    انسان جب پیدا کرنے والے سے دُور ہو جاتا ہے تو مادی چیزیں جو سامنے نظر آتی ہیں اُن پر بھروسہ کرنے لگتا ہے پھر اُسے اللہ کی مدد نظر نہیں آتی

    اسماء صاحبہ
    خوشی ہنسنے کا نام تو کوتاہ اندیشوں نے رکھ دیا ہے ۔ کبھی آپ نے دیکھا کہ اچانک بہت خوشی ملنے سے آنکھوں سے آنسوؤں کی برسات جاری ہو جاتی ہے ۔ خوشی دراصل کِسی چیز کے حصول یا کامیابی کو کہتے ہیں ۔ اوّل بات اللہ پر یقین ہے ۔ اِس کے بغیر کچھ نہیں ۔

  7. اجمل said

    عائشہ بیٹی
    انسان جب پیدا کرنے والے سے دُور ہو جاتا ہے تو مادی چیزیں جو سامنے نظر آتی ہیں اُن پر بھروسہ کرنے لگتا ہے پھر اُسے اللہ کی مدد نظر نہیں آتی

    اسماء صاحبہ
    خوشی ہنسنے کا نام تو کوتاہ اندیشوں نے رکھ دیا ہے ۔ کبھی آپ نے دیکھا کہ اچانک بہت خوشی ملنے سے آنکھوں سے آنسوؤں کی برسات جاری ہو جاتی ہے ۔ خوشی دراصل کِسی چیز کے حصول یا کامیابی کو کہتے ہیں ۔ اوّل بات اللہ پر یقین ہے ۔ اِس کے بغیر کچھ نہیں ۔

  8. Ayesha said

    آج کل میں قرآن بمعہ ترجمے و تفسیر کے پڑھ رہی ہوں اور شچ پوچھے تو اتنا سکون ملتا ہے کہ بس۔۔ اور امید اور ہمت بڑھ جاتی ہے، پر آج کل کچھ ایسا بھی ہو رہا ہے کہ جب کوئی آزمائش آتی تو کافی اداس ہوجاتی ہوں میرے ساتھ ایسا کبھی نہیں ہوا۔۔ انکل دعائوں میں دیا رکھیے گا۔۔

    اللہ نگہبان۔

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Connecting to %s

 
%d bloggers like this: